متعلقہ

بجلی 3 روپے 41 پیسے مہنگی کرنے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ – پاک لائیو ٹی وی


بجلی 3 روپے 41 پیسے مہنگی کرنے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ

اسلام آباد: نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) نے مئی کی ماہانہ فیول ایڈجسٹمنٹ کے تحت بجلی 3 روپے 41 پیسے مہنگی کرنے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کر لیا۔

نیپرا میں سی پی پی اے کی  بجلی 3 روپے 41 پیسے مہنگی کرنے کی درخواست پر سماعت ہوئی۔

سی سی پی اے حکام نے کہا کہ آر ایل این جی قیمتیں برقرار رہی ہیں، جس پر ممبر نیپرا نے کہا کہ کئی علاقوں میں لوڈ شیڈنگ کافی زیادہ ہوگئی ہے، حکام نے کہا کہ لوڈ شیڈنگ کی یقینا کوئی اور وجہ ہوگی، جنریشن سائڈ سے مکمل بجلی فراہم کی جا رہی ہے۔

ممبر نیپرا نے استفسار کیا کہ آر ایل این کے ساتھ کتنے سالوں کے معاہدے ہوتے ہیں، سی ہی پی اے حکام نے بتایا کہ ابھی ایل این جی کا معاہدہ مئی 2025 تک ہے، ایل این جی کا معاہدہ پیٹرولیم ڈویژن ریوائز کرے گا، لانگ ٹرم معاہدوں کی مڈ رینج رویژن پر بھی کام چل رہا ہے۔

ممبر نیپرا نے کہا کہ اس وقت سپلائی تو نہیں بڑھی پائی ڈیمانڈ بڑھی ہے، سی پی پی اے حکام نے کہا کہ پاور سیکٹر کے بعد گیس کی بڑی کنزیومر انڈسٹری ہے، ماہانہ پروڈکشن پلان منظور نہیں ہو سکا، ماہانہ پروڈکشن پلان لائیں گے تو کنزیومر پر بھاری بوجھ پڑے گا، گیس میں ماہانہ پروڈکشن پلان ممکن نہیں ہے۔

حکام کا کہنا تھا کہ مئی پہلے 14 دن موسم کافی اچھا رہا بارشیں بھی ہوئیں، ٹمریچر بڑھنے کے ساتھ ساتھ ہمارا جنریشن پیٹرن بھی تبدیل ہو رہا ہے، اس وقت پیک ٹائم شفٹ بھی ہوگیا ہے اور زیادہ بھی ہوگیا ہے۔

سی پی پی اے حکام نے بتایا کہ مئی میں ونڈ پاور پلانٹس کی بجلی کی پیداوار بہتر رہی، جولائی میں بارشوں کا امکان ہے، جس سے طلب کم ہوسکتی ہے۔

نیپرا اتھارٹی نے کہا کہ اس وقت ملک بھر میں لوڈ شیڈنگ کا مسئلہ ہے،  یہ صرف باتیں ہیں کہ لوڈ شیڈنگ صرف نقصان والے فیڈرز پر ہے، اس وقت ہر جگہ ہی لوڈ شیڈنگ ہورہی ہے۔

این ٹی ڈی سی حکام نے کہا کہ بجلی کی پیداوار کی وجہ سے لوڈ شیڈنگ نہیں ہورہی، اس وقت بجلی کا کوئی شارٹ فال نہیں ہے۔

آر ایل این جی کی مینڈیٹری امپورٹ کی پالیسی پر نیپرا اتھارٹی نے پسندیدگی کا اظہار کیا اور سوال کیا کہ  بتایا جائے کہ آر ایل این جی کے معاہدے کب ختم ہورہے ہیں؟

این ٹی ڈی سی حکام نے جواب دیا کہ آر ایل این جی معاہدے پر آئندہ سال نظرثانی ہوگی، مئی کیلئے ایل این جی کی ڈیمانڈ کا اندازہ جنوری میں لگایا گیا تھا، دسمبںر تک سات ارب ڈالر کی آر ایل این جی درآمد ہونی ہے، صنعتی شعبے میں بھی آر ایل این جی کی کھپت کم ہے۔

بعدازاں بجلی 3 روپے 41 پیسے فی یونٹ مہنگی کرنے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا گیا ہے، تاہم نیپرا اتھارٹی اعدادوشمار کا جائزہ لینے کے بعد فیصلہ جاری کرے گی۔